بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

7 ذو الحجة 1443ھ 07 جولائی 2022 ء

دارالافتاء

 

لیمن گراس کا حکم


سوال

ليمن گراس كا حكم كيا هے؟ كيا اس كو استعمال كرسكتے ہیں؟

جواب

واضح رہےکہ نباتات وغيره ميں اصل اباحت ہے ،یعنی اس کوکھانے پینے میں  استعمال کرنا جائز ہے بشرطیکہ وہ مضر نہ ہو ،لہذا صورتِ  مسئولہ میں لیمن گراس بھی حلال اور مباح ہے اور اس کو  استعمال کرنا جائز ہے،باقی یہ استعمال کرنے والے کی طبیعت کے موافق ہے یا نہیں، اس بارے میں کسی ماہر طبیب سے مشورہ کرلیا جائے۔

فتاوی شامی میں ہے:

"أقول: وصرح في التحرير بأن المختار أن الأصل الإباحة عند الجمهور من الحنفية و الشافعية اهـ و تبعه تلميذه العلامة قاسم، وجرى عليه في الهداية من فصل الحداد، وفي الخانية من أوائل الحظر والإباحة."

(سنن الوضوء، کتاب الطهارۃ، ص/105، ج/1، ط/سعید)

مجلۃ الاحکام العدلیہ میں ہے:

"المادة (1254) يجوز لكل أحد الانتفاع بالمباح، لكنه مشروط بعدم الإضرار بالعامة."

(الباب الرابع في بیان شرکة الإباحة، ص/241، ط/نور محمد)

فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144304100084

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں