بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

20 ذو الحجة 1442ھ 31 جولائی 2021 ء

دارالافتاء

 

لڑکیوں کے لیے کان چھدوانا


سوال

لڑکیوں کا کان چھدوانا کیسا ہے ؟

جواب

لڑکیوں کے لیے کان چھدوانا جائز ہے، اس میں شرعاً  کوئی حرج نہیں، رسول اللہ ﷺ کے زمانے میں بھی مسلمان  عورتیں اور بچیاں  کان چھدواتی رہیں، اور اس پر کوئی نکیر نہیں کی گئی۔

وفي الفتاوى الهندية :

"ولا بأس بثقب آذان النسوان كذا في الظهيرية.ولا بأس بثقب آذان الأطفال من البنات لأنهم كانوا يفعلون ذلك في زمان رسول الله  صلى الله عليه وآله وسلم  من غير إنكار كذا في الكبرى." (5/ 357ط:دار الفكر)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144207200289

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں