بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو الحجة 1441ھ- 08 اگست 2020 ء

دارالافتاء

 

لائبہ نام رکھنا


سوال

لائبہ کا مطلب کیا ہے ؟

جواب

’’لائبہ‘‘  یہ عربی زبان کا لفظ ہے ،’’لاب‘‘  سے مشتق ہے،  جس کے  معنی:

(1)     پیاسا ہونا۔

( 2)  پیا سے کا پانی کے ارد گرد گھومنا اور اس تک نہ پہنچ پانا۔

لہذا ’’لائبہ‘‘   کا معنی ہو ا:   پیاسی لڑکی،  یا وہ  پیاسی لڑکی  جو پانی کے ارد گرد گھومتی ہو اور پانی تک نہ پہنچ سکے۔

بچی کا یہ نام رکھنا اچھا نہیں ہے، لہذا بہتر یہ ہے کہ بچی کا نام صحابیات رضی اللہ عنہن  یا مسلمان نیک خواتین کے ناموں میں سے کسی نام پر  یا اچھا بامعنی نام رکھیں یا ایسا نام رکھیں کہ جس کا مسلمانوں کے درمیان نام رکھنے کا تعامل ہو۔

المعجم الوسيط (2/ 844):

"(لاب): الرجل أو البعير لوباً ولواباً ولوباناً: عطش واستدار حول الماء وهو عطشان لا يصل إليه فهو لائب، (ج) لؤوب ولوب ولوائب، يقال: إبل لوب ولوائب، وهي لائبة، والجمع لوائب". فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144109201402

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں