بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 20 جنوری 2021 ء

دارالافتاء

 

کیا مسجد میں جنازہ ادا کیا جاسکتا ہے؟


سوال

 کیا مسجد میں جنازہ ادا کیا جاسکتا ہے؟

جواب

کسی معتبر عذر کے بغیر مسجد میں جنازے کی نماز اداکرنا مکروہ ہے، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین کا معمول یہی تھا کہ نمازِ جنازہ مسجد سے باہر کھلی جگہ میں ادا فرماتے تھے۔ البتہ اگر کوئی عذر ہو، مثلاً شدید بارش ہو اور کوئی متبادل جگہ موجود نہ ہو تو اس صورت میں مسجد میں نماز جنازہ ادا کی جاسکتی ہے۔

حدیث شریف میں ہے :

                  "(مَنْ صَلَّى عَلَى جَنَازَةٍ فِي الْمَسْجِدِ فَلَا شَيْءَ عَلَيْهِ)".

  (سنن ابی داود :101/2،ط:رحمانیة)                      

فتاوی ہندیہ میں ہے:

                 "وصلاة الجنازة في المسجد الذي تقام فیه الجماعة مکروهة، ولاتكرہ بعذر المطر ونحوہ."

(ج:1،ص:165،ط:رشیدیة)                    

فقط واللہ اعلم                    


فتوی نمبر : 144204200091

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں