بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

3 ربیع الاول 1442ھ- 21 اکتوبر 2020 ء

دارالافتاء

 

کیا کسی خاتون پر دوسری عورت کا سایہ ہو سکتا ہے؟


سوال

کیا کسی عورت پر کسی اور عورت کا سایہ ہو سکتا ہے جو اولاد ہونے سے روک رہی ہے؟ اسلام میں اس کی حقیقت کیا ہے؟

جواب

ایسی باتیں توہمات میں سے ہیں، حقیقت و شریعت سے اس کا کوئی واسطہ نہیں، لہذا ان شیطانی خیالات کا شکار ہونے سے  بچنا چاہیے، اولاد کا ہونا، نہ ہونا، ازروئے قرآن خالقِ کائنات کی تقسیم ہے، جسے چاہتا ہے اسے  صرف  بیٹوں  سے نواز دیتا ہے، اور جسے چاہتا ہےاسے  صرف بیٹیوں سے نواز دیتا ہے، اور جسے چاہتا ہے دونوں عطا کردیتا ہے، اور جسے چاہتا ہے  اسے بے اولاد بنا دیتا ہے، پس اس تقسیم پر راضی رہنا چاہیے، اور اولاد کے لیے اللہ سے دعا کرتے رہنا چاہیے۔ نیز صبح و شام تین تین مرتبہ آیۃ الکرسی اور آخری تین قل (سورہ اخلاص، سورہ فلق اور سورہ ناس) پڑھ کر اپنے اوپر دم کرلیا جائے۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144112200544

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں