بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 محرم 1446ھ 24 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

کیا جنت اور جہنم موجود ہیں


سوال

کیا جنت اور جہنم موجود ہیں ؟

جواب

واضح رہے کہ  جنت اور جہنم دونوں  حقیقت ہیں اور موجود ہیں ، اللہ تعالی  نے اپنے نیک بندوں کو ان کی نیکیوں کا بدلہ دینے کہ لیے  جنت کو  بنایا ، گناہ گا راور کافر بندوں کے لیے جہنم کو بنایا ۔نیک  بندے ہمیشہ کے لیے  جنت میں رہیں  گےاور گناہ گار(مسلمان )  بندے کو اگر اللہ تعالی اپنے فضل و کرم سے معاف کر دے تو بہتر ورنہ اپنے گناہوں کی سزا پاکر ایک  نہ ایک دن ضرور  جنت میں داخل ہوں گے ۔  

شرح العقیدۃ  الطحاوی  میں ہے :

"أما قوله : إن الجنة والنار مخلوقان ، فاتفق  أهل  السنة علي  أن الجنة والنار مخلوقتان موجودتان الآن ، ولم  يزل أهل السنة  علي  ذلك، حتي نبغت نابغة من المعتزلة والقدرية ،فأنكرت  ذلك وقالت : بل  ينشئهما الله  يوم القيامة ".

(ص: 240 مکتبة قاسم العلوم )

شرح المقاصد میں ہے:

"جمهور المسلمين على أن الجنة والنار مخلوقتان الآن، خلافاً لأبي هاشم والقاضي عبد الجبار و من يجرى مجراهما من المعتزلة حيث زعموا أنهما يخلقان يوم الجزاء."

(المقصد السادس  فی السمعیات ، فصل فی المعاد  3 /358 ط: دار الکتب  العلمیه )

شرح الفقہ الاکبر میں  ہے :

"والجنة والنار مخلوقتان اليوم: أى موجودتان الآن قبل يوم القيامة ، لقوله تعالى في نعت الجنة أعدت للمتقين و فى وصف النار : أعدت للكافرين ) وللحديث القدسي: (أعددت لعبادي الصالحين ما لا عين رأت ولا أذن سمعت، ولا خطر على قلب بشر و لحديث الإسراء: الجنة و أريت النار “ و هذه الصيغة موضوعة للمضي حقيقةً ، فلا وجه للعدول عنها إلى ادخلت) المجاز إلا بصريح آية أو صحيح دلالة ، و في المسألة خلاف للمعتزلة".

(ص: 118 مطبع مجتبائي دهلي)

فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144409100735

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں