بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

3 ذو الحجة 1443ھ 03 جولائی 2022 ء

دارالافتاء

 

کیا بیوہ اپنے مرحوم شوہر کو غسل دے سکتی ہے؟


سوال

اگر حامد کا انتقال ہوجائے، تو  کیا اس کی بیوی اسے غسل دے سکتی ہے؟

جواب

شوہر کی وفات کی صورت میں اگر اسے کوئی غسل دینے والا  مرد  نہ ہو تو اس کی بیوہ اسے غسل دے سکتی  ہے۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

"وَيُغَسِّلُ الرِّجَالَ الرِّجَالُ وَالنِّسَاءُ النِّسَاءَ، وَ لَايُغَسِّلُ أَحَدُهُمَا الْآخَرَ، فَإِنْ كَانَ الْمَيِّتُ صَغِيرًا لَايُشْتَهَى جَازَ أَنْ يُغَسِّلَهُ النِّسَاءُ، وَ كَذَا إذَا كَانَتْ صَغِيرَةً لَاتُشْتَهَى جَازَ لِلرِّجَالِ غُسْلُهَا، وَ الْمَجْبُوبُ وَالْخَصِيُّ فِي ذَلِكَ كَالْفَحْلِ، وَ يَجُوزُ لِلْمَرْأَةِ أَنْ تُغَسِّلَ زَوْجَهَا إذَا لَمْ يَحْدُثْ بَعْدَ مَوْتِهِ مَا يُوجِبُ الْبَيْنُونَةَ مِنْ تَقْبِيلِ ابْنِ زَوْجِهَا أَوْ أَبِيهِ، وَإِنْ حَدَثَ ذَلِكَ بَعْدَ مَوْتِهِ لَمْ يَجُزْ لَهَا غُسْلُهُ، وَ أَمَّا هُوَ فَلَايُغَسِّلُهَا عِنْدَنَا، كَذَا فِي السِّرَاجِ الْوَهَّاجِ."

(كتاب الجنائز، الْفَصْلُ الثَّانِي فِي غُسْلِ الْمَيِّتِ، ١ / ١٦٠، ط: دار الفكر)

 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144111200116

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں