بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

18 ذو القعدة 1445ھ 27 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

کون کون سے نمازوں کی قضا کرنا ضروری ہے؟


سوال

کتنی نمازوں کی قضا کی جاسکتی ہے ؟ اور کون کون سی نمازوں کی قضا  کی جاتی ہے؟

جواب

 بلوغت کے بعد سے جتنی پنج وقتہ فرض نمازیں  اور وترکی نمازیں قضاء ہوئی ہیں، اُن تمام نمازوں کی قضاء کرنا ضروری ہے۔

قضاء نمازوں سے متعلق مزید تفصیل کے لیے درج ذیل لنک ملاحظہ کیاجائے:

 قضا نمازوں کی تعداد معلوم نہ ہونے کی صورت میں ادائیگی کا طریقہ، نیت اور مکمل ادائیگی سے پہلے فوت ہونے کی صورت میں فدیہ کا بیان

فتاوی شامی میں ہے:

"(وقضاء الفرض والواجب والسنة فرض وواجب وسنة) لف ونشر مرتب، وجميع أوقات العمر وقت للقضاء إلا الثلاثة المنهية، كما مر. (قوله: وقضاء الفرض إلخ) لو قدم ذلك أول الباب أو آخره عن التفريع الآتي لكان أنسب. وأيضاً قوله: والسنة يوهم العموم كالفرض والواجب وليس كذلك، فلو قال: وما يقضى من السنة لرفع هذا الوهم، رملي."

(كتاب الصلوة، باب قضاء الفوائت، ج:2، ص:66، ط: سعيد)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144508102691

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں