بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

2 ذو الحجة 1443ھ 02 جولائی 2022 ء

دارالافتاء

 

کیا نو مہینے کے خصی جانور كی قُربانی كرنا جائز ہے؟


سوال

کیا نو مہینے کی خصی قُربانی دے  سکتے  ہیں؟

جواب

واضح رہے کہ شریعتِ مطہرہ میں قربانی کے جانور کی قربانی درست ہونے کے لیے ایک خاص عمر کی تعیین  کی ہے، جیسے بکرا ، بکری  وغیرہ کےلیے  ایک سال کا ہونا ضروری ہے ،اگر ایک  سال سےکم عمر کا ہو تو اس کی قربانی جائز نہیں ،اور دنبے کی قربانی کے لیے بھی ایک سالہ جانور ہونا چاہیے، البتہ اگر  چھ ماہ سے زیادہ عمر کا دنبہ اتنا فربہ ہو کہ وہ سال بھر کا معلوم ہوتاہو  تو اس کی قربانی کی اجازت ہے۔

اگر سوال کا منشاء کچھ اور ہو تو وضاحت کرکے دوبارہ معلوم کرلیاجائے۔

فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144311101273

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں