بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

16 ذو الحجة 1445ھ 23 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

خریدے ہوئے مال کی واپسی یا تبدیلی کےبارے میں حدیث


سوال

میں خریدے ہوئے مال کو واپس یاتبدیل کرنے کے حوالے سے صحیح حدیث اور اس کا ریفرنس چاہتا ہوں۔برائے مہربانی راہ نمائی فرمائیں

جواب

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:’’جو شخص (فروخت کرنےوالا) کسی مسلمان(خریدار) کا اقالہ قبول کرے(یعنی اگر وہ خریدی ہوئی چیز واپس کرناچاہے تواس سے واپس  لے لے)تو اللہ تعالی قیامت کے دن اس کی لغزش  معاف فرمائیں گے‘‘۔

"سنن ابو داود " اور" سنن ابن ماجة" میں ہے:

"عن أبي هريرة-رضي الله عنه- قال: قال رسولُ الله -صلّى الله عليه وسلّم-: «من أقال مسلماً  أقالَه  اللهُ عثْرتَه يومَ القيامة»".

(سنن أبي داود، باب في فضل الإقالة (5/ 328) برقم (3460)، ط/دار الرسالة العالمية 1430ه)

(سنن ابن ماجه، باب الإقالة، (3/ 318، برقم (2199)، ط/دار الرسالة العالمية 1430ه)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144407101916

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں