بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 ربیع الاول 1443ھ 22 اکتوبر 2021 ء

دارالافتاء

 

کھال اتارتے وقت مرغی کی گردن کا الگ کرنا


سوال

میں نے مرغی ذبح کی اور کھال اتارتے وقت اس کی گردن اتر گئی ، اس وقت تک میں نے پیٹ چاک نہیں کیا تھا تو اس صورت میں اس کا گوشت مکروہ ہوا  یا نہیں؟

جواب

جانور  ذبح کرکے اس کے  ٹھنڈا ہو جانے کے بعد اس کی گردن الگ کردینا جائز ہے، خواہ پیٹ چاک  کیا ہو یا نہ کیا ہو، ہاں ! جانور کے ٹھنڈا ہونے سے پہلے ہی اُس کی گردن کو تَن سے  جدا کر دینا مکروہ ہے ؛ لہذا صورتِ  مسئولہ میں اگر     آپ نے  مرغی کی کھال اتارتے وقت ، اس کا پیٹ چاک کرنے سے پہلے  اس  کی گردن  الگ کردی  تو اس سے کوئی کراہت نہیں آئے گی۔

الفتاوى الهندية (5/ 287):

"ويستحب الاكتفاء بقطع الأوداج و لايباين الرأس و لو فعل يكره."

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212201723

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں