بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 شوال 1443ھ 19 مئی 2022 ء

دارالافتاء

 

 حیض اور نفاس کے دوران پہنے ہوئے کپڑے کا حکم


سوال

 حیض  اور  نفاس کے  دوران جو کپڑے پہنے جاتے ہیں، کیا وہ مکمل نا پاک  ہوں گے یا  صرف  وہ  حصہ ناپاک سمجھا جائے گا جس پر نجاست ظاہری طور پر لگی ہوگی؟  اور  اسی طرح  حیض  اور  نفاس کے دوران استعمال ہونے والی چارپائی کی چادروں کا کیا حکم ہے؟  جن پر ظاہری نجاست نہ ہو،  صرف بدن سے لگے ہوں !

جواب

 حیض اور نفاس کے دوران جو کپڑے پہنے جاتے ہیں، ان  میں سے صرف وہ حصہ ناپاک سمجھا جائے گاجس پر نجاست ظاہری طور پر لگی ہوگی۔ حیض اور نفاس کے دوران استعمال ہونے والی چارپائی کی چادروں کا بھی یہی حکم ہے، اگرنجاست لگی ہوئی نظر آئے یا یقین ہو کہ یہاں نجاست لگی ہےتو  صرف اس نجاست والے حصہ کو بھی تین دفعہ دھو کر پاک کرلیا جائے تو کافی ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144110201524

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں