بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ربیع الاول 1443ھ 24 اکتوبر 2021 ء

دارالافتاء

 

جوبلی فیملی تکافل کے ساتھ لین دین اور ملازمت کا حکم


سوال

جوبلی فیملی تکافل کے ساتھ لین دین اور اس میں ملازمت کرنا کیسا ہے؟ 

جواب

’’جوبلی  فیملی تکافل‘‘ اور  موجودہ دور میں اس جیسی جتنی دیگر تکافل پالیسیاں ہیں، ان سب میں بھی وہی خرابیاں (یعنی سود، جوا اور غرر) پائی جاتی ہیں جو   انشورنس  میں پائی جاتی ہیں؛ اس لیے انشورنس کی طرح کسی بھی ادارے (جوبلی فیملی تکافل) کے ساتھ کسی بھی قسم کا لین دین  اور ملازمت  کرنا  جائز نہیں ہے۔  تکافل کے عدمِ جواز کے  بارے میں تفصیلی فتوی وجوہات سمیت ہماری ویب سائٹ پر شائع ہو چکا ہے اسے دیکھ لیں:

پاک قطر تکافل کی پالیسی خریدنا اور اس ادارے میں ملازمت کرنے کا حکم

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144201200816

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں