بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 جُمادى الأولى 1444ھ 08 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

جس جانور کے دانت توڑ دیے گئے ہوں اُس کی قربانی کرنا


سوال

اگر قربانی کے جانور کے  دانت توڑ دیے گئے ہیں تو اس کا کیا حکم ہے؟

جواب

اگر کسی جانور کے  کچھ دانت توڑ دیے گئے ہوں تو یہ قربانی کے لیے مانع نہیں ہے،   اس کی قربانی جائز ہے، بشرطیکہ اس کی قربانی کے لیے مقرر عمر پوری ہو اور وہ چارہ  وغیرہ  بسہولت کھا سکتا ہو، اگر دانت اتنے توڑ دیے کہ جانور چارہ ہی نہیں چبا سکتا تو اس کی قربانی درست نہیں ہوگی۔ 

مزید تفصیل کے لیے یہ لنک ملاحظہ کریں:

قربانی کے جانور کے دانتوں کے بارے میں تفصیل

''فتاوی ہندیہ'' میں ہے:

''و أما الهتماء وهي التي لا أسنان لها، فإن كانت ترعی و تعلف جازت و إلا فلا''. (٥/ ٢٩٨، ط: رشيدية)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144211200920

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں