بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 محرم 1446ھ 21 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

جنابت کی حالت میں سحری کرکے فجر کے بعد غسل کرنے کا حکم


سوال

حالتِ جنابت میں سحری کھانے اور  فجر کی نماز کے بعد  غسل کرنے کی صورت میں روزہ ہوجائے گا یا نہیں؟

 

جواب

حالتِ جنابت میں سحری کھانا جائز ہے، البتہ فجر کی نماز قضا ہونے سے پہلے غسل کر کے فجر کی نماز پڑھنا فرض ہے، بلکہ سحری کے فورًا بعد غسل کر کے فجر کی نماز باجماعت ادا کرنی چاہیے۔

اگر کوئی جنابت کی حالت میں سحری کر کے فجر کی نماز قضا ہونے کے بعد غسل کرے تو اس کا یہ فعل ناجائز اور گناہ کا باعث ہے، البتہ روزہ ادا ہوجائے گا، اگرچہ نماز قضا کرنے کی وجہ سے روزہ کی مکمل برکات سے محروم رہے گا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144109201285

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں