بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 جُمادى الأولى 1444ھ 29 نومبر 2022 ء

دارالافتاء

 

اسفندیار نام رکھنے کا حکم


سوال

اسفند یار نام رکھنا کیسا ہے؟

جواب

" اسفندیار " کا معنی ہے: قدرتِ حق۔ (فرہنگ فارسی، ص:50، ط:دارالاشاعت)

یہ ایران کے بادشاہوں میں سے گیبشتاسپ کے بیٹے کا نام ہے، لہذا اس کے بجائے انبیاءِ کرام علیہم السلام، صحابہ کرام رضی اللہ عنہم، یا تابعین کے ناموں میں سے کسی نام کا انتخاب کرکے رکھا جائے تو باعثِ برکت ہونے کے ساتھ ساتھ افضل بھی ہے، کیوں کہ حدیث شریف میں اچھے نام رکھنے کی تعلیم ہے، اس لیے کہ قیامت کے دن انسان کو اپنے اور اپنے والد کے نام سے پکارا جائے گا۔ 

ہماری ویب سائٹ کے سرور ورق پر اسلامی ناموں کے سیکشن میں حروف تہجی کی ترتیب سے لڑکوں اور لڑکیوں کے منتخب نام موجود ہیں، جنس اور حرف کا منتخب کرکے نام کا انتخاب کرسکتے ہیں۔

التنبيه والإشراف میں ہے-

"كان أولهم أردشير بن بابك بن ساسان بن بابك من ولد بهمن بن أسفنديار بن كيبشتاسب بن كيلهراسب، وهو الّذي أزال ملوك الطوائف، ويسمى ملكه «ملك الاجتماع» ملك أربع عشرة سنةً وشهورًا."

(ذكر ملوك الفرس الثانية وهم الساسانية، وهي الطبقة الخامسة من ملوكهم، ج:1، ص:87، ط:دارالصاوى)

فقط والله اعلم 


فتوی نمبر : 144206200365

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں