بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

18 شوال 1443ھ 20 مئی 2022 ء

دارالافتاء

 

علم روایت الحدیث اور علم درایت الحدیث کسے کہتے ہیں؟


سوال

علم روایۃ الحدیث اوردرایۃالحدیث کی وضاحت کریں !

جواب

حضرت مولانا ظفر احمد عثمانی صاحب رحمہ اللہ اپنی کتاب ’’قواعد في علوم الحدیث‘‘ میں اس کی تفصیل یوں بیان کرتے ہیں :

علم حدیث کی دو قسمیں ہیں:

۱۔علمِ حدیث روایۃً 

۲۔علمِ حدیث درایۃً 

علمِ حدیث روایۃً : وہ علم ہے جس کے ذریعے حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے اَقوال، اَفعال، اَحوال اور اُن کی روایت کو ، اُنہیں ضبط کرنے اور اُن کے الفاظ لکھنے کو جانا جاتا ہے۔

علمِ حدیث درایۃً : وہ علم ہے جس کے ذریعے روایت کی حقیقت ، اس کے شرائط ، اَقسام ، اَحکام ، راویوں کے اَحوال ، اُن کے شرائط ، اور روایات کی قسمیں اور اس کے متعلقات کو جانا جاتا ہے ۔

 (قواعد في علوم الحدیث ، المقدمة في المبادئ والحدود :۲۲ ،ط: إدارة القرآن والعلوم الإسلامية بكراتشي )

فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144207200804

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں