بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

24 ذو الحجة 1442ھ 04 اگست 2021 ء

دارالافتاء

 

حروف تہجی کو دیہاتی طریقے (الف بے تے ثے جیم حے خے) کے مطابق پڑھنے اور پڑھانے کا حکم


سوال

حروف تہجی کو الف بے تے ثے جیم حے خے جیسا کی دیہاتوں میں پڑھایا جاتا ہے،  ایسے پڑھنا یا پڑھانا جائز ہے ؟

جواب

عربی کے  حروفِ  تہجی کو سوال میں مذکورہ طریقے سے پڑھنا یا پڑھانا درست نہیں ہے،  یعنی عربی قاعدہ یا قرآنِ مجید کی تعلیم دیتے ہوئے حروفِ تہجی کا مذکورہ تلفظ درست نہیں ہے۔ البتہ اردو  کے حروف تہجی کو سوال میں مذکورہ طریقہ سے پڑھنا اور پڑھانا درست ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144203200075

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں