بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

16 ذو الحجة 1445ھ 23 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

حکومتی گھر اسکیم سے گھر کے لیے قرضہ لینا


سوال

حکومتی ایک کروڑ گھر سکیم سے گھر کے لیے قرضہ لینا جائز ہے یا نا جائز؟ 

جواب

صورتِ مسئولہ میں اگر مذکورہ اسکیم میں گھر کے لیے قرضہ دینے کے بعد واپسی پر اضافی رقم بھی لی جاتی  ہو تو  (جیساکہ بینکوں کا طریقہ ہے) یہ سودی قرضہ ہوگا،  جس کا لین دین ناجائز اور حرام ہے۔ فقط واللہ اعلم

مزید تفصیل کے لیے  درج ذیل لنک پر فتویٰ ملاحظہ فرمائیں:

میزان بینک سے قرضہ لے کر حکومتی اسکیم میں مکان خریدنے کا حکم


فتوی نمبر : 144204200783

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں