بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

20 شعبان 1445ھ 02 مارچ 2024 ء

دارالافتاء

 

ہندو لڑکی سے زنا کا حکم


سوال

مسلمان آدمی نے  غیر مسلم ہندو لڑکی سے زنا کیا تو مسلمان آدمی کافر ہوجائے گا؟

جواب

زنا کبیرہ گناہوں میں سے  ہے،  خواہ مسلمان لڑکی  سے ہو یا غیر مسلم سے،  "کنز العمال" میں ایک روایت  ہے  کہ:  شرک کرنے کے بعد اللہ کے نزدیک کوئی گناہ اس نطفہ سے بڑا نہیں ، جس کو آدمی اُس شرم گاہ میں رکھتا ہے جو اس کے لیے حلال نہیں ہے، البتہ اگرگناہ کو حلا ل سمجھ کر نہ کیا ہو تو اس عمل سے یہ شخص اسلام سے خارج نہیں ہوگا،تاہم اس پر  لازم ہے کہ اس گناہ سے فورًا توبہ و استغفار کرے اور آئندہ نہ کرنے کا مضبوط عزم کرے، نیز اس لڑکی سے  رابطہ و تعلق  (ملاقات  و  بات  چیت)  ختم کردے۔

" ما ذنب بعد الشرك أعظم عند الله من نطفة وضعها رجل في رحم لايحل له. "ابن أبي الدنيا عن الهيثم بن مالك الطائي."

(کنز العمال (5/ 314، رقم الحدیث 12994۔ الباب  الثاني في أنواع الحدود ، ط: مؤسسة الرسالة)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212202313

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں