بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

6 صفر 1442ھ- 24 ستمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

ہندو کے ساتھ کھانے پینے کا حکم


سوال

میرا آپ سے یہ سوال ہے کہ کیا ہم کسی ہندو کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھا سکتے ہیں۔ اس کے بارے میں شریعت کیا کہتی ہے؟

جواب

کفار کے ساتھ بلا ضرورت اختلاط و ارتباط ممنوع ہے، اورکھانا کھانا بلا ضرورت اختلاط میں داخل ہے، اس لیے اجتناب کرنا بہتر ہے لیکن انسانی رشتہ کی بنیاد پرسا تھ بیٹھ سکتے ہیں،اوراگر ظاہری طور پر کوئی ناپاک چیز یا حرام چیز ہاتھوں پریاکھانے پینے کی چیزوں میں شامل نہ ہو توساتھ بیٹھ کر کھانے میں بھی کوئی حرج نہیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143101200482

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں