بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 جُمادى الأولى 1444ھ 07 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

ہاؤس بلڈنگ فنانس کارپوریشن سے قرض لینا


سوال

کیا ’’ایچ بی ایف سی‘‘ سے ہاؤس لون لینا جائز ہے؟ کیوں کہ ان کی ڈیڈ بھی شریعت کورٹ سے منسلک ہے؟

جواب

 اگر HBFC(ہاؤس بلڈنگ فنانس کارپوریشن)کی جانب سے گھر کی خریداری کے لیے  قرضہ سود پر دیا جاتا ہو یعنی جتنا قرضہ دیا ہو قسطوں کی صورت میں  اس سے کچھ زیادہ وصول کیا جاتا ہو تو اس طرح کا سودی قرضہ لینا جائز نہیں ہے، کیوں کہ سودی قرضہ کا لین دین بنصِ قرآنی ناجائز اور حرام ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (5/ 166):

وفي الأشباه: كل قرض جر نفعاً حرام۔

(قوله: كل قرض جر نفعاً حرام) أي إذا كان مشروطاً.

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144112201609

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں