بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 شعبان 1445ھ 25 فروری 2024 ء

دارالافتاء

 

کپڑے، جوتے، عطر، گھڑی، قیمتی پتھروں پر زکاۃ کا حکم


سوال

قیمتی ملبوسات، جوتوں، عطریات اور گھڑیوں وغیرہ پر زکاۃ کا کیا حکم ہے؟  نیز ہیرے،نیلم،فیروزہ اور دیگر بیش قیمت پتھروں پر زکاۃ کا کیا حکم ہے، جو کہ عموما انگوٹھی میں لگا کر پہنے جاتے ہیں؟

جواب

مذکورہ تمام اشیاء اگر تجارت کی غرض سے نہ ہوں تو ان پر زکاۃ لازم نہیں ہے۔

فتاوی ہندیہ میں ہے :

"وأما اليواقيت واللآلئ والجواهر فلا زكاة فيها، وإن كانت حليًا إلا أن تكون للتجارة، كذا في الجوهرة". (180/1ط: رشیدیه) فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144109201416

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں