بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 رجب 1444ھ 03 فروری 2023 ء

دارالافتاء

 

حمام میں کپڑے لٹکانا


سوال

کیا حمام میں کپڑے لٹکانا جائز ہے؟

جواب

حمام یا باتھ روم میں کپڑے لٹکانے میں شرعاً کوئی حرج نہیں، ضرورت کے موقع پر کپڑے لٹکائے جا سکتے ہیں اور جب تک باتھ روم کی دیواروں پر یقینی طور پر کوئی نجاست نہ لگی ہوئی ہو اور  کپڑے اس کے ساتھ لگنے سے اس نجاست کا اثر کپڑوں میں نہ آجائے، اس وقت تک کپڑے ناپاک بھی  نہیں ہوں گے، اس لیے اس میں حرج محسوس نہ کرنا چاہیے، بس یہ خیال رہے کہ حمام میں ایسی جگہ کپڑے   نہ لٹکائے جائیں جہاں ناپاکی کی چھینٹیں آنے کا اندیشہ ہو۔ فقط واللہ اعلم

 


فتوی نمبر : 144211200935

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں