بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

7 رجب 1444ھ 30 جنوری 2023 ء

دارالافتاء

 

حجرِ اسود کا سائز قیامت کے دن بڑھ جائے گا


سوال

 کیا حجر اسود کا سائز قربِ قیامت میں بڑھ جائے گا یعنی جس طرح انسان کا قد بھی قد آدم جتنا ہو گا، کیا کوئی حدیث دلالت کرتی ہے اس بات پر؟

جواب

احادیثِ طیبہ میں حجرِ اسود کے فضائل و مناقب اور احکامات کے بارے میں متعدد روایات مروی ہیں، حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما کی روایت ہے کہ قیامت کے دن اللہ تعالی حجر اسود کو اس حال میں اٹھائے گا   کہ اس کی دو آنکھیں  ہوں گی، جس سے وہ دیکھے گا، اور اس کی زبان ہوگی جس سے وہ بات کرے گا، جس نے  اس کا حقیقی  استلام کیا  ہوگا اس کے حق میں گواہی دے گا، ابن عباس رضی اللہ عنہما کی ایک اور روایت میں ہے کہ قیامت کے دن حجر اسود کو   اس حالت میں اٹھایا جائے گا کہ اس کا قد اُحد پہاڑ  جتنا ہوگا۔

 جامع الترمذی میں  ہے:

"عن ابن عباس قال : قال رسول الله صلى الله عليه و سلم في الحجر: والله! ليبعثنّه الله يوم القيامة له عينان يبصر بهما ولسان ينطق به يشهد على من استلمه بحق."

(باب ماجاء في الحجر الأسود، ج:3/ص:294، ط: دار إحیاء التراث العربي)

فتح الباری میں ہے:

"وفي صحيح بن خزيمة أيضًا عن أبن عباس مرفوعًا أن لهذا الحجر لسانًا وشفتين يشهدان لمن استلمه يوم القيامة بحق، و صحّحه أيضًا ابن حبان والحاكم، و له شاهد من حديث أنس عند الحاكم أيضًا قوله: عن إبراهيم هو بن يزيد النخعي وقد رواه سفيان وهو الثوري بإسناد آخر عن إبراهيم وهو بن عبد الأعلى عن سويد بن غفلة عن عمر، أخرجه مسلم."

(باب ما ذکر في الحجر الأسود، ج:3/ص:462، ط: دارالمعرفة)

صحیح ابن خزیمہ میں ہے:

"عن ابن عباس: عن النبي صلى الله عليه و سلم قال: الحجر الأسود ياقوتة بيضاء من ياقوت الجنة، و إنما سودته خطايا المشركين، يبعث يوم القيامة مثل أحد يشهد لمن استلمه و قبله من أهل الدنيا."

(باب ذكر الدليل على أنّ الحجر إنما سودته .../ج:4/ص:220/ ط: المکتب الإسلامي)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144201200330

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں