بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 جُمادى الأولى 1444ھ 04 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

حدیث صحیح کی شرائط


سوال

حدیث کےصحیح ہونے کی ۵ شرائط کونسی ہیں؟

جواب

حدیثِ  صحیح   کی  متاخرین کے ہاں  تعریف یہ ہے:

"هو ما اتصل سنده بنقل عدلٍ تامّ الضبط، غیر معلّلٍ و لا شاذٍّ، فالحدیث المجمع علی صحته عند المحدثین هو ما اجتمع فیه خمسة شرائط."

(المدخل إلی أصول الحدیث :۹۶، ط: دارالکتب پشاور)

یعنی  حدیث  ِ صحیح وہ ہوتی ہے جس میں کم از کم  5 شرائط پائی جاتی ہوں:

۱) اس کی سند متصل ہو(منقطع نہ ہو)۔

۲) تمام راوی عادل ہوں۔

۳)تام الضبط ہوں (یعنی  ان تمام راویوں کا حافظہ بھی قوی ہو)۔

۴) حدیث معلل نہ ہو ۔

۵) حدیث شاذ نہ ہو۔

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144209201097

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں