بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 20 جنوری 2021 ء

دارالافتاء

 

گولڈ میڈل (Gold Medal) پر زکات اور قربانی کے وجوب کا حکم


سوال

کیا گولڈ میڈل (جو یونیورسٹی سے ملا ہو) پر زکوٰۃ اور قربانی فرض ہوگی؟

جواب

سونا (Gold) چاہے زیور کی شکل میں ہو یا میڈل (Medal) کی شکل میں ہو،نصاب کے بقدر ہونے کی صورت میں اس پر زکات بھی واجب ہوتی ہے اور اس کی وجہ سے قربانی بھی واجب ہوتی ہے؛ لہٰذا گولڈ میڈل (Gold Medal) جو کسی بھی ادارے سے بطورِ انعام ملا ہو، اس پر زکات بھی واجب ہوگی اور قربانی بھی، بشرطیکہ اکیلے یا چاندی، یا رقم وغیرہ کے ساتھ مل کر نصاب کی مقدار تک پہنچ جائے۔

یعنی اگر صرف یہ سونا ہو (چاندی، رقم اور مالِ تجارت بالکل بھی ملکیت میں نہ ہو) تو جب تک سونا ساڑھے سات تولہ کے برابر یا اس سے زیادہ نہ ہو، زکات واجب نہیں ہوگی۔ اگر سونے کے ساتھ چاندی بھی ہو، یا سونا اور رقم یا سونا اور مالِ تجارت یا سونے کے ساتھ مذکورہ تینوں اشیاء میں سے جو بھی ہو، اور سب مل کر ساڑھے باون تولہ چاندی کی قیمت کے برابر یا اس سے زیادہ ہو تو سالانہ زکات ہوگی۔ اور اگر عید الاضحٰی کے دنوں میں اس سونے کے ساتھ کوئی بھی ضرورت و استعمال سے زائد سامان موجود ہو، اور اس مجموعے کی مالیت ساڑھے باون تولہ چاندی کی قیمت تک پہنچ جائے تو قربانی واجب ہوگی۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144112200993

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں