بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

1 ربیع الاول 1444ھ 28 ستمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

گھر کے 9 افراد کی طرف سے ایک جانور کی قربانی کرنا


سوال

 اگر ایک گھر میں 8,9 افراد ہوں اور ہر ایک پر قربانی کرنا واجب ہو اور گھر کا سربراہ راہ ایک جانور لے کر آ جائے اور یہ کہے کہ سب کی طرف سے یہ قربانی ہے تو کیا یہ سب کی طرف سے قربانی ہو جائے گی اور یا سب پر الگ الگ قربانی  کرنا ہوگی؟

جواب

واضح رہے کہ ایک بڑے جانور گائے میں زیادہ سے سات افراد کی شرکت شرعًا جائز ہوتی ہے، سات سے زائد افراد کی شرکت کی صورت میں قربانی درست نہیں ہوتی، لہذا صورتِ مسئولہ میں گھر کے جتنے افراد پر قربانی واجب ہو  ان کی جانب سے علیحدہ علیحدہ قربانی کرنا واجب ہوگا، محض ایک جانور سارے گھر والوں کی طرف سے کرلینا کافی نہ ہوگا۔  مزید تفصیل کے لیے دیکھیے:

کیا سارے گھر والوں کی طرف سے ایک قربانی کرنا کافی ہے؟

 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144211201328

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں