بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

7 صفر 1442ھ- 25 ستمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

فجر کے وقت سے دو گھنٹے پہلے روزے کی نیت کرنے کے بعد کھانے پینے کا حکم


سوال

 اگر کوئی شخص فجر سے 2 گھنٹے پہلے روزے کی نیت کر لے تو اب وہ اس کے بعد کچھ کھا سکتا ہے؟ اس لیے کہ فجر کے وقت میں 2 گھنٹے باقی ہیں؟

جواب

شرعاً  روزہ فجر کا وقت داخل ہونے سے (یعنی صبح صادق) سے شروع ہوتا ہے، اس لیے فجر (صبح صادق) سے دو گھنٹے پہلے روزے کی نیت کرنے کے باوجود فجر کا وقت داخل ہونے سے پہلے تک بغیر کسی تردد کے کھانا پینا جائز ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144109201816

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں