بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 صفر 1443ھ 19 ستمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

فارعہ نام رکھنا


سوال

 لڑکی کا نام  "فارعہ "رکھنا کیسا ہے ؟ اس کے معنی کیا ہیں؟

جواب

"فارعہ"   کئی صحابيات رضی اللہ عنہن  كا  نام هے، نیز لغت عربی  میں ’’فَارِعَه‘‘ کے معنی بلندی کے آتے ہیں،  لہٰذا   یہ  نام  رکھنا جائز، بلکہ اچھا ہے۔

"الفارعة بنت أسعد بن زرارة

ب: الفارعة بنت أسعد بن زرارة الأنصاري أوصى بها أبوها أبو أمامة أسعد وبأختيها حبيبة وكبشة إلى رسول الله صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فزوجها رسول الله صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ من نبيط بن جابر من بني مالك بن النجار."

(أسد الغابة ط العلمية-كتاب النساء-7168- الفارعة بنت أسعد بن زرارة- صفحة -210، ج 7، الناشر : دار الكتب العلمية)

فی معجم الرائد:

"فارعة - جمع، فوارع - (اسم) 1- فارعة : مؤنث فارع، 2- فارعة : « فارعة الجبل » : أعلاه ، قمته، 3- فارعة : « فارعة الطريق » : أعلاه". 

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144209201094

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں