بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 شوال 1441ھ- 27 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

عید کی نماز ادا کرنا


سوال

عید کی نماز فرض ہے یا واجب؟  اگر عید کی نماز چھوٹ گئی تو کیا کرے؟

جواب

عید کی نماز واجب ہے۔ اگر چھوٹ گئی  اور  اسی دن زوال سے پہلے پہلے کسی جگہ جماعت سے نہ مل سکی تو  اب اس کی ادائیگی کی صورت نہیں ہے،  عید کی نماز  کی انفرادی طورپر قضا نہیں ہے، اگر عید کی نماز رہ گئی ہے تو  توبہ واستغفار کیاجائے۔

الموسوعة الفقهية الكويتية (27/ 240):
"صلاة العيدين واجبة على القول الصحيح المفتى به عند الحنفية. والمراد من الواجب عند الحنفية: أنه منزلة بين الفرض والسنة، ودليل ذلك: مواظبة النبي صلى الله عليه وسلم عليها من دون تركها ولو مرةً، وأنه لايصلي التطوع بجماعة، ما خلا قيام رمضان، وكسوف الشمس، وصلاة العيدين فإنها تؤدى بجماعة". فقط و الله أعلم


فتوی نمبر : 144108200872

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے