بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 جُمادى الأولى 1444ھ 09 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

دنبے کو چمڑا سمیت آگ میں بھوننے کا حکم


سوال

دنبے کو چمڑے سمیت آگ پر بھوننا کیسا ہے؟

جواب

ذبح شدہ دنبے کو آگ پر بھوننا جائز ہے، البتہ اس میں مندرجہ ذیل اجزاء کا کھانا جائز نہیں ہے :

1۔  دمِ  مسفوح یعنی بہنےوالاخون۔

2۔ پیشاب کی جگہ (نرومادہ کی)۔

3۔ خصیے(فوطے)۔

4۔ پاخانے کی جگہ۔

5۔ غدود(سخت گوشت)۔

6۔ مثانہ(پیشاب کی تھیلی)۔

7۔ پِتَّا۔

اس لیے بہتر ہے کہ دنبے کو بھوننے سے پہلے ان اعضا کو ہٹا لیا جائے۔

فتاوی شامی میں ہے :

"ما يحرم أكله من أجزاء الحيوان المأكول سبعة: الدم المسفوح والذكر والأنثيان والقبل والغدة والمثانة والمرارة بدائع."  

(6/ 311ط:سعيد)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144307101589

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں