بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 شوال 1441ھ- 27 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

دورانِ اعتکاف انٹرنیٹ پر نوکری کرنا


سوال

کیا اعتکاف کے دوران انٹرنیٹ پر کوئی نوکری کی جاسکتی ہے؟

جواب

اعتکاف کا مقصد یک سو ہو کر  اللہ تعالی کا قرب حاصل کرنے کے لیے اس کی عبادت کرنا ہے، لہذا اعتکاف کے دوران ہر قسم کی مصروفیت ترک کرکے زیادہ سے زیادہ وقت عبادت میں گزارنا چاہیے، اس لیے اعتکاف کے دوران انٹرنیٹ پر نوکری کرنا مکروہ ہے، لیکن اگر کوئی شخص ایسا کرتا ہے تو اس کا اعتکاف نہیں ٹوٹے گا۔

نیز انٹرنیٹ پر نوکری کی صورت میں اگر جان دار کی تصویر یا ویڈیو دیکھنا یا آن لائن ویڈیو لنک کے ذریعے نوکری کرنی پڑتی ہے تو اس میں جان دار کی تصویر بنانے یا دیکھنے کا گناہ بھی ہوگا۔ البتہ اگر کوئی عالم یا مفتی تصاویر اور دیگر منکرات وغیرہ سے پاک ویب سائٹ پر دینی راہ نمائی یا فتاویٰ کے اجرا کی خدمت میں مصروف ہو تو بوقتِ ضرورت اس کی اجازت ہوگی۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) - (2 / 448):
"(وخص) المعتكف (بأكل وشرب ونوم وعقد احتاج إليه) لنفسه أو عياله فلو لتجارة كره (كبيع ونكاح ورجعة)".

و في الرد:

"(قوله: فلو لتجارة كره) أي وإن لم يحضر السلعة، واختاره قاضي خان، ورجحه الزيلعي؛ لأنه منقطع إلى الله تعالى فلا ينبغي له أن يشتغل بأمور الدنيا، بحر". فقط و الله أعلم


فتوی نمبر : 144109202629

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے