بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

22 جمادى الاخرى 1441ھ- 17 فروری 2020 ء

دارالافتاء

 

دایئں ہاتھ سے لینے دینے کا حکم


سوال

.کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام اس بارے میں کہ اگر کوئی بے خیالی میں کوئی چیز بائیں ہاتھ سے پکڑے یا دے اس پر اسے شرم دلانا اور اصرار کرنا کہ دائیں ہاتھ ہی سے پکڑو اور وہ دل میں شرمندگی محسوس کرے، اس کا کیا حکم ے؟

جواب

دائیں ہاتھ سے چیز لینا دینا یا پکڑنا مستحب کے درجہ میں ہے، تعلیم وترغیب کے لیئے اس کے عمل کا اصرار کرنا تو ٹھیک ہے لیکن عمل نہ کرنے والے کو ملامت کرنا یا شرمندہ کرنا جائز نہیں ہے۔ واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143501200015

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے