بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

20 ذو الحجة 1442ھ 31 جولائی 2021 ء

دارالافتاء

 

چیک کی صورت میں زکوۃ دینے سے زکوٰۃ کی ادائیگی


سوال

اگر کسی شخص نے کسی فقیر  آدمی کو  چیک دیا بطورِ  زکاۃ، تو کیا چیک دینے سے زکاۃ ادا ہوجاتی ہے؛ کیوں کہ چیک کلیئر ہونے میں 3 سے 4 دن لگ جاتے ہیں ، تو کیا محض چیک دینے سے زکاۃ ادا ہوجائے گی یا بینک سے پیسے   ملنے کےبعد زکاۃ ادا ہو گی؟

جواب

بینک کے چیک کی حیثیت کرنسی کی رسید کی ہے،  لہذا چیک کی صورت میں زکوٰۃ دینے سے زکوٰۃ اس وقت ادا ہوگی جب مستحق شخص کو وہ رقم مل جائے یا اس کے اکاؤنٹ میں وہ رقم آجائے، اس سے پہلے زکوٰۃ ادا نہیں ہوگی۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144205200045

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں