بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 ربیع الثانی 1442ھ- 01 دسمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

بیوی کا دودھ پینا جائز ہے یا نہیں؟


سوال

بیوی کا دودھ پینا جائز ہے یا نہیں؟

جواب

بیوی کا دودھ  پینا حرام ہے، اس لیے کہ دودھ عورت کے بدن کا جزء ہے اور اجزائے انسانی کا استعمال جائزنہیں ہے، بچوں کے لیے مدتِ رضاعت میں (یعنی بچے کی عمر دو سال ہونے تک) ضرورت کی وجہ سے اجازت دی گئی ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (3 / 211):

"(ولم يبح الإرضاع بعد موته)؛ لأنه جزء آدمي والانتفاع به لغير ضرورة حرام على الصحيح، شرح الوهبانية". 

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144204200100

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں