بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 صفر 1443ھ 17 ستمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

بیوی کا شوہرکو اس کے نام سے پکارنا اور شوہر کا بیوی کو ڈانٹنا


سوال

1۔ کیا شوہر کو ان کے نام سے  پکار  سکتے  ہیں؟

2۔  کیا شوہر اپنے  مرتبے اور عزت  کے لیے اپنے والدین اور بہن بھائیوں کے سامنے بیوی کو ڈانٹ ڈپٹ کر سکتا ہے ؟

جواب

1-  شوہر کو اس کے نام سے پکارنا مکروہ ہے۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

" يُكْرَهُ أَنْ يَدْعُوَ الرَّجُلُ أَبَاهُ وَالْمَرْأَةُ زَوْجَهَا بِاسْمِهِ، كَذَا فِي السِّرَاجِيَّةِ."

(الْبَابُ الثَّانِي وَالْعِشْرُونَ فِي تَسْمِيَةِ الْأَوْلَادِ وَكُنَاهُمْ وَالْعَقِيقَةِ، ٥/ ٣٦٥)

2-  بلاوجہ بیوی کو ڈانٹنا مناسب نہیں ہے، البتہ اگر واقعی بیوی کی غلطی ہو اور والدین یا بہن بھائیوں کے سامنے اسے ڈانٹنا حکمت کا تقاضا ہو تو  اس  کی اجازت  ہوگی۔

 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212200091

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں