بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 جُمادى الأولى 1444ھ 04 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

بیوہ شادی کرلے تو پھر بھی مرحوم شوہر کی میراث میں حصہ دار ہو گی


سوال

 میری بہونے میرے بیٹےکی وفات کے بعددوسری جگہ شادی کی ،ایسی صورت میں کیاوہ بیٹے کی وراثت میں حصہ دارہے گی؟ 

جواب

واضح رہے کہ شرعی نقطہ نظرسےبیوہ عورت جب عدت کے بعددوسرے شخص سے نکاح کرلےتو اس کی وجہ سےبیوہ اپنے مرحوم شوہرکی وراثت  سے محروم نہیں ہوتی ، کیوں کہ نکاح ِ جدیدموانع ِ ارث میں سے نہیں ہے۔لہذاسائلہ کی بہوکادوسری شادی کرنے کی وجہ سے مرحوم بیٹے کی وراثت میں سےاس کا حصہ ختم نہیں ہوا۔

السراجی فی المیراث میں ہے:

" المانع من الارث اربعة : الرق ... و القتل واختلاف الدينيين واختلاف الدارين۔" 

(السراجي في الميراث، فصل في الموانع ، ص : 5ط: الميزان ، لاهور)

 فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144306100851

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں