بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 صفر 1443ھ 19 ستمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

بیوہ اور بیٹے اور بیٹیوں کا والد کے ترکہ میں کتنا حق ہے؟


سوال

 والد مرحوم کے ترکہ میں بیوہ اور بیٹے  بیٹیوں کا کیا حصہ ہوتا ہے؟

جواب

صورتِ  مسئولہ میں مرحوم کے ترکہ منقولہ و غیر منقولہ کے آٹھویں حصہ کی حق دار اس کی بیوہ ہوگی، جب کہ بقیہ ترکہ ایک اور آدھے کے تناسب سے بیٹے اور بیٹیوں میں تقسیم کیا جائے گا۔

مکمل شرعی تقسیم معلوم کرنا اگر مطلوب ہو تو بیٹے اور بیٹیوں کی مکمل تفصیل لکھ کر سوال دوبارہ ارسال کردیا جائے، نیز اگر مرحوم کے والدین حیات ہیں تو سوال میں اس کی وضاحت بھی کردیجیے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144211201042

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں