بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 محرم 1446ھ 22 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

بیتی کا نام ’ہانی‘ نہیں ’ہانیہ‘ رکھا جائے


سوال

 کیا میں اپنی بیٹی کا نام ہانے رکھ سکتا ہوں؟

جواب

واضح ہو کہ ’ہانی‘ عربی زبان کا لفظ ہے جسے اردو میں  چھوٹی یاء کے ساتھ  لکھا جاتا ہے نہ کہ بڑی یاء کے ساتھ۔

’ہانی‘ خادم کے معنی میں ہے اور یہ مذکر نام ہے۔ بیٹی کا نام رکھنا ہو تو ’ہانیہ‘ رکھا جائے، یہ نام رکھنا درست ہے۔

تاج العروس  میں ہے :

"والهانىء: الخادم."

(1/ 513، دار الہدایہ)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144401100534

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں