بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

19 ربیع الثانی 1442ھ- 05 دسمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

بغیر کسٹم کی سیگریٹ، چھالیہ اور نسوار کا حکم


سوال

بغیر کسٹم کی سیگریٹ، نسوار بیچنا کیسا ہے؟

جواب

ناجائز اشیاء کی اسمگلنگ ناجائز  اورجائز کی جائز ہے، لیکن مفادِ عامہ کی خاطر اگر حکومتی سطح پر جائز اشیاء کی اسمگلنگ ممنوع ہو تو گریز کرناچاہیے؛ کیوں کہ قانون شکنی کی صورت میں  مال اور عزت کا خطرہ رہتا ہے، البتہ جائز اشیاء کی اسمگلنگ سےجو نفع حاصل ہو گا وہ حلال ہو گا؛ لہذا بغیر کسٹم کی سیگریٹ، چھالیہ اور نسوار بیچنے کی آمدنی حلال ہے، البتہ اگر حلال اشیاء میں اس سے بہتر کوئی ایسا کاروبار میسر ہو جس میں قانون شکنی بھی نہ ہو تو وہ بہتر ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144202200377

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں