بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 ذو الحجة 1441ھ- 04 اگست 2020 ء

دارالافتاء

 

بے اولاد پھوپھی کے ترکہ کا حق دار کون ہوگا؟


سوال

 بےاولاد بیوہ پھوپھی کے ورثاء میں صرف ایک بہن اور تین بھائی ہیں. کیا بہن اور بھائیوں کے ہوتے ہوئے بھتیجے بھتیجیاں بھی وارث بن سکتے ہیں؟ مرحومہ نےایک بھتیجی لے کر پالی ہوئی تھی، اسی کا مسئلہ ہے کہ کیا  اسےکچھ ترکہ میں سے مل سکتا ہے؟

جواب

صورتِ  مسئولہ میں مذکورہ بے اولاد  بیوہ  خاتون کی وفات کی صورت میں ان کے ترکہ کے حق دار ان کے حقیقی بھائی اور  بہن ہی ہوں گے، بشرطیکہ مذکورہ بیوہ خاتون کی وفات کے وقت تک وہ زندہ رہیں، اس صورت میں بھتیجے اور بھتیجیاں حق دار نہ ہوں گے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144109200330

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں