بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

بینک سے کمائی ہوئی رقم سے حج یا عمرہ ادا کرنا


سوال

سوال یہ پوچھنا ہے کہ بینک میں نوکری کرنے والا حج یا عمرہ پر جائے تو اسکا حج یا عمرہ ہو جائے گا یا نہیں؟

جواب

بینک سے کمائی ہوئی رقم سے حج کرے یا عمرہ اداء کرے تو ادائیگی ہوجائے گی البتہ اس پر ثواب نہیں ملے گا کیونکہ بینک ایک سودی ادارہ ہے اسی سودی ادارے میں ملازم سودی معاملات میں تعاون کرتا ہے جوحرام ہے اورسودی آمدنی سے تنخواہ دیجاتی ہے تو وہ بھی حرام ہے


فتوی نمبر : 143101200238

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے