بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 جُمادى الأولى 1444ھ 29 نومبر 2022 ء

دارالافتاء

 

بچی کا نام یمسا رکھنا


سوال

یمسا لفظ کے کیا معنی ہیں۔میں نے اپنی بیٹی کایہ نام رکھا ہے، کیا یہ ٹھیک ہے؟

جواب

يمسا: " مَسَا يمسُوْ  مَسْوًا "ہے  جس کا معنی ہے: وعدہ پورا کرنے میں تاخیر  کرنا، یا" أمسي يمسي ٳمساءً"  سے ہے جس کا معني ہے: شام کے وقت میں داخل ہونا(دیکھئے: القاموس الوحید:مادة  باب الميم(ص1554)، ط. اداره اسلاميات، لاهور)، یہ نام رکھنا درست نہیں،   اس نام کو تبدیل کرکے صحابیات میں سے کسی صحابیہ کا نام  یا کوئی بامعني اسلامی نام کا انتخاب کرے، اس کے لئے سائل ہماری ویب سائٹ پر اسلامی ناموں کے سیکشن سے فائدہ اٹھا سکتا ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144401102069

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں