بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 محرم 1446ھ 15 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

عورت كے تراويح پڑهانے كا حكم


سوال

کیا عورت تراویح پڑھا سکتی ہے؟

جواب

عورتوں کی نماز  جماعت کے ساتھ مکروہ ہے،خواہ وہ تراویح کی ہو یا دوسری نمازوں کی ہو،لہذا عورتوں کو  الگ الگ نمازپڑھنا چاہیے ۔

فتاوی شامی میں ہے:

"(و) يكره تحريما (جماعة النساء) ولو التراويح ... قوله: و لو في التراويح) أفاد أن الكراهة في كل ما تشرع فيه جماعة الرجال فرضًا أو نفلًا".

(كتاب الصلاة، باب الإمامة، ج:1، ص:565، ط: سعيد)

فقط و  اللہ اعلم


فتوی نمبر : 144509102312

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں