بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ذو الحجة 1445ھ 21 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

عورتوں کا تراویح کی جماعت میں شرکت کرنا


سوال

رمضان میں تراویح کے لیے عورت کا جانا صحیح ہے، اور کیا یہ جو عورتوں کے لیے انتظام کرتے ہیں پردہ وغیرہ، کیا یہ کرنا جائز ہے؟

جواب

عورت کا باپردہ تراویح میں شرکت کرنا اور ان کے لیے با پردہ انتظام کرنا اگر چہ جائز ہے لیکن پسندیدہ نہیں ہے حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے عورت کی نماز کو گھر اور گھر میں بھی اندرونی حصہ میں نماز پڑھنے کو مسجد نبوی کی جماعت میں شرکت سے بھی افضل قرار دیا ہے۔ اس لیے عورتوں کے لیے افضل یہی ہے کہ فرض نمازوں کی طرح تراویح بھی گھر ہی میں ادا کریں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143101200280

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں