بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

29 ربیع الثانی 1443ھ 05 دسمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

عرشیاں نام رکھنا


سوال

عرشیان نام رکھنا کیسا ہے؟

 

جواب

"عرشیاں" فارسی زبان کا لفظ ہے اور اس کا معنیٰ ہے: عرش کا سامان اور مقرب  فرشتے۔ (لغاتِ فارسی، ص: 579)

یہ نام نہ رکھا جائے؛ کیوں کہ فقہاء نے فرشتوں کے ناموں پر نام  رکھنے سے متعلق کراہت کا حکم لکھا ہے،  اور عرشیاں بھی مقرب فرشتوں کو کہا جاتا ہے، بہتر ہے کہ اپنے بچوں کے نام انبیاء اور  صحابہ و صحابیات  کے ناموں پر رکھا جائے کہ ایسا کرنا باعثِ برکت ہوتا ہے۔

شرح السنة (12 / 336):
"ويكره التسمي بأسماء الملائكة مثل جبريل وميكائيل؛ لأن عمر ابن الخطاب رضي الله عنه قد كره ذلك، ولم يأتنا عن أحد من الصحابة ولا التابعين أنه سمى ولداً له باسم أحد منهم، هذا قول حميد بن زنجوية".

 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212201731

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں