بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 صفر 1443ھ 18 ستمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

ارحم نام رکھنا جائز ہے


سوال

 ارحم (Arham) نام رکھنا کیسا ہے ؟ اس کا کوئی گناہ تو نہیں ؟ کچھ لوگ کہتے ہیں ارحم،  اللہ کے لیے  استعمال ہوتا ہے ، جیسے : ارحم الراحمین، اس لیے  یہ نام رکھنا ٹھیک نہیں !

جواب

"ارحم"  کے معنی ہیں: نسبتًا زیادہ رحم کرنے والا، یہ نام رکھنا جائز ہے ، البتہ  "ارحم الراحمین"  کسی بندے کا نام رکھنا درست نہیں ہے، اور اللہ تعالیٰ کے لیے یہ لفظ جب استعمال ہوتا ہے تو یہ اضافت کے ساتھ استعمال ہوتا ہے، یعنی "ارحم الراحمین"۔  فقط واللہ اعلم 

تفصیل درج ذیل لنک پر فتوے میں ملاحظہ کیجیے:

’’ارحم‘‘ نام کا مطلب اور رکھنے کا حکم


فتوی نمبر : 144109202020

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں