بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 ذو القعدة 1445ھ 22 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

عقیقہ کے گوشت کا استعمال


سوال

عقیقہ کے گوشت کو کیا کرنا چاہیے؟

جواب

عقیقہ کے گوشت کا وہی حکم ہے جو قربانی کے گوشت کاہے، لہذا اگر ساراخود کھانا چاہے تو اس کی بھی اجازت ہے، تاہم بہتر یہ ہے کہ اس کے تین حصے کئے جائے ،ایک تہائی غرباء میں تقسیم کیاجائے،ایک تہائی اقرباء میں تقسیم کیا جائے اور ایک تہائی خود استعمال کر لے۔

فتاوی شامی میں ہے:

"والأفضل أن یتصدق بالثلث ویتخذ الثلث ضیافة لأقربائہ وأصدقائہ ویدّخر الثلث ․․․ ولو حبس الکل لنفسہ جاز، لان القربۃ فی الاراقۃ والتصدق باللحم تطوع."

(کتاب الاضحیۃ، ج:6،ص:328،ط:سعید)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144405100667

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں