بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

6 صفر 1442ھ- 24 ستمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

امانت کا پیسہ اصل مالک کو واپس کرنا ضروری ہے


سوال

میں سن2000 میں کاروبار کرتا تھا،  میرے پاس پانچ چھ لوگ میرے کرنٹ اکاؤنٹ میں پیسے بھیجتے تھے،  کاروبار ختم ہوگیا،  ہر کوئی اپنی راہ چلا،  میرے پاس اکاؤنٹ میں ایک لاکھ روپے رہ گئے،  میں نے کسی کو اس لیے نہیں بتایا کہ جھگڑا شروع نہ ہو جائے ۔ اب سمجھ میں نہیں آتا کہ اس ایک لاکھ روپے کا کیا کروں؟

جواب

صورتِ  مسئولہ میں جو افراد آپ کے اکاؤنٹ میں پیسے بھیجتے تھے، ان سے تحقیق کرلی جائے، ان میں سے جن کا یہ پیسہ ہو، انہیں لوٹانا واجب ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144112200410

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں